The dilemma of populist leaders

for them problems were simple : Some countries are evil their people ‘bad hombres’ and dealing with them was also fairly simple : ‘F*** them’.

ماں

خدا کہوں یا کہ خدا نما کہ دوں ماں بتا کہ تجھ کو کیا کہ دوں شرک کی حد اگر ہٹا دے خدا خداکے بعد ماں کو ہی خدا کہ دوں مسیح مریم کو بھول کر تجھ کو ہر دکھ درد کی دوا کہ دوں تجھ پی لکھتے قلم نہیں تھکتا تیری ہستی کو میں…

کربلا

  وہ جس کا پرچم ہے کھلا وہ جس کا پہرہ انما وہ جس کا سہرہ ہے کسا  جو ہے سکینہ کا چچا آ اس کی جانب چل چلیں کروانے عقدے حل چلیں آ کربلا کی سمت آ جس خاک پر ہے کبریا کا سب کا سب جود و سخا ہے گھر شہ لولاک کا…

MIRZAI KO PHANSI DO

As a result,the state which is obliged to protect its citizens in life threatening situations,seems to act like a spell bound spectator during the numerous events of misconduct of ahmedis by the extremist mobs.